Action
Haseeb Khan
Haseeb Khan کومنٹس

پاکستانی " بت "

گزشتہ روز ایک دوست کے ہاں جانا ہوا جس کمرے میں گفتگو ہو رہی تھی وہیں بچے ٹی وی سے بھی لطف اندوز ہو رہے تھے دوست کے بار بار منع کرنے پر بھی آواز بڑھ جاتی اور پھر وہ چلاتا
ارے آواز کم کر دو انکل سے بات کرنے دو . تھوڑی دیر کا اثر اور پھر وہی معاملہ

اچانک کانوں میں موسیقی کی آواز پڑی اور وہ بھی اسطرف متوجہ ہو گیا
واہ کیا پروگرام ہے وہ کام کی تمام باتوں کو جیسے بھول چکا تھا
میں ٹی وی نہیں دیکھتا میرا جواب تھا
ارے مولوی تم بھی نا اس نے تاسف سے سر ہلایا
ضرور دیکھنا اس نے پروگرام کا نام لیا
کیا کیا ........
میں چونکا کیا نام بتایا تم نے
اس نے نام دہرایا
" پاکستانی بت " مجھے اپنی آواز بھی اجنبی سی لگی
ارے نہیں نہیں کیا ہو گیا ہے مولوی " پاکستانی بت" نہیں (pakistan idol)
شاید اسکی آنکھوں پر وہ پٹی بندھ چکی تھی جو الفاظ و معانی کی پہچان بی ختم کرا دیتی ہے

اسکے بعد وہاں میرا دل نہیں لگا اور میں گھر چلا آیا
پاکستانی بت پاکستانی بت
میں شاید بڑبڑا رہا تھا
اسکے بعد کئی لوگوں سے گفتگو ہوئی اور سب نے میری بات کو دیوانے کی بڑ سے زیادہ اہمیت نہ دی
شاید الفاظ اپنے معانی اتنے بدل دیتے ہیں ( idol) بت نہیں رہتا کچھ اور ہو جاتا ہے
اندر ہی اندر ایک جنگ چلتی رہی
یہ لفظ ہے کیا آیا کہاں سے ہے کس طرح معروف ہوا ہے تحقیق کی ضرورت ہے تاکہ لوگوں تک اپنی بات پہنچائی جا سکے
فرانسیسی میں اسے (idole) کہا جاتا تھا
لاطینی اسے (idolum) کے نام سے جانتے تھے
قدیم یونان میں یہ (eidolon) تھا
اگر ان تمام کے مفاہیم کو کھنگالا جاۓ تو مطلب یہ بنتا
" انسانی ہاتھوں سے تراشا ہوا جھوٹا خدا"

چونکہ یہ انگریزی کے توسط سے ہم تک پہنچا ہے تو یہ بھی دیکھ لیا جاۓ کہ انگریزی زبان و بیان میں اسکا کیا مطلب لیا جاتا ہے
(appearance, reflection in water or a mirror," later "mental image, apparition, phantom," also "material image, statue," from eidos "form" (see -oid). Figurative sense of "something idolized" is first recorded 1560s (in Middle English the figurative sense was "someone who is false or untrustworthy"). Meaning "a person so adored" is from 1590s.)

انسانی ہاتھوں سے تراشیدہ انسانی ذہن کا بنایا ہوا جھوٹا خدا
(idol)

اردو میں اسے " بت " اور فارسی میں صنم کہتے ہیں

گو مزید تحقیق سے معلوم ہوا کہ یہ باقائدہ ایک فرنچائز ہے (Idols) کے نام سے اور دنیا میں شخصی بت پرستی کو ترویج دینے کی مہم چلا رہی ہے ہاں سب سے آخر میں اپنانے والی ہماری قوم ہے لیکن کیا کیجئے یہ قوم تو بت پرستی بھی ڈھنگ سے کرنا نہیں جانتی
شاعر نے کیا خوب کہا ہے

صنم تراش پر آدابِ کافرانہ سمجھ
ہر ایک سنگِ سرِ راہ کو خدا نہ سمجھ

حسیب احمد حسیب

میوسس (Muses) کا جادو !

یہ کہانی ہے لفظوں اور یادوں کی دیوی (Mnemosyne) کی جب دیوتاؤں کا دیوتا زیوس اسپر عاشق ہوا کہتے ہیں نو راتیں ( Zeus) اپنی محبوبہ سے ملا اور انکی نو بیٹیاں پیدہ ہوئیں نو پیدائشی دیویاں نو جسم لیکن ایک جان فطرت اور اظہار خیال کے نو مختلف رنگ

(Calliope) لافانی گیت کی دیوی
(Clio) تاریخ کی دیوی
(Euterpe) انترے و استھائی کی دیوی
(Melpomene) غم کی دیوی
(Terpsichore) رقص کی دیوی
(Erato) ہیجان انگیز شاعری کی دیوی
(Polyhymnia) مقدس گیت کی دیوی
(Urania) ستاروں کی دیوی
(Thalia) مزاح کی دیوی

جدید لفظ (music) میوسس کی نشانی ہے رقص و سرود رنگ و موسیقی کی علامت

(Olympus," according to "Muses and Sirens," by J. R. T. Pollard; The Classical Review New Series, Vol. 2, No. 2 (Jun., 1952), pp. 60-63.
"(ll. 53-74) Them in Pieria did Mnemosyne (Memory), who reigns over the hills of Eleuther, bear of union with the father, the son of Cronos, a forgetting of ills and a rest from sorrow. For nine nights did wise Zeus lie with her, entering her holy bed remote from the immortals. And when a year was passed and the seasons came round as the months waned, and many days were accomplished, she bare nine daughters, all of one mind, whose hearts are set upon song and their spirit free from care, a little way from the topmost peak of snowy Olympus.
Hesiod Theogony)

یہ ہے جدید استعمار کا وہ حربہ کپیٹل ازم کی وہ چال جس میں پوری دنیا ایک بہت بڑی مارکیٹ ہے اور اس میں رہنے والا ہر شخص خریدار ہے یا بکاؤ ہے اور انکے پاس ہتھیار ہے کنزیومر کپیٹل ازم اور برانڈنگ کا اس دنیا میں ایک چھوٹی سی موبائل فون کمپنی نعرہ لگاتی ہے زندگیوں کی تبدیدلی (Reshaping Lives) کا

یہ جدید تہذیب قدیم یونانی تیوہار لوپر کال کو ویلن ٹائین بنا کر پیش کرتی ہے کرسمس میں سانتا کلاز کا پھندنا لگا دیتی ہے بیچ پر عریاں ماردی گراس منایا جاتا ہے اور جب یہ استعمار مشرقی مارکیٹ کی طرف آتا ہے تو یہاں کے حربے آزماتا ہے بسنت پنچمی ، ہولی دیوالی ، دسہرہ یا پھر قدیم بابوں کے عرس قوالی کی محفلیں رقص و موسیقی رنگ بدل بدل کر سامنے آتی ہے ....

ایسے میں جدید میڈیائی مگر مچھ اپنا منہ کھولے پورے کے پورے معاشروں کو نگلنے کے لیے تیار بیٹھے ہیں دجال کی ایک آنکھ ہر گھر میں دیکھتی اور اپنے رنگ دکھاتی ہے اور اس جادو کے خلاف کہیں دور سے ایک آواز آتی سنائی دیتی ہے

" میں آلاتِ مزامیر کو توڑنے کے لیے آیا ہوں "

حسیب احمد حسیب
" صنم خانہ یورپ "

(Idols) برطانوی ٹی وی نے ٢٠٠١ میں (Pop Idol) کے نام سے موسیقی کی ایک سیریز شروع کی جو بعد ازاں آئ ڈول فرنچائز کے بینر تلے پوری دنیا میں معروف ہوا اس پروگرام کا سب سے آخری شکار پاکستان بنا ..
" پاکستانی بت " شاید اس سیریز کا سب سے بھونڈا ورژن ہے جسنے ناکامی کا ایک نیا ریکارڈ قائم کیا ہے اس پروگرام کے ججز میں ایک پرانی ادکارہ جو میکپ کی تہوں میں اپنا بڑھاپا چھپانے کی ناکام کوششوں میں مصروف ہیں پاکستانی پاپ موسیقی کا ایک چلا ہوا کارتوس جو گلوکار سے زیادہ کامیڈین دکھائی دیتا ہے اور ایک ایسی گلوکارہ جسکا کوئی ذاتی گانا آج تک معروف نہ ہو سکا اس پروگرام کو پاکستان کا ایک معروف میڈیائی مگرمچھ پروموٹ کرنے کی ناکام کوششوں میں مصروف ہے ..

جدید استعماری میڈیا ثقافتی بت تیار کرنے میں ماہر ہے گو ہمارے پڑوس میں موجود بت پرست قوم نے مختلف اداکاروں کھلاڑیوں اور گلوکاروں کے مندر تک بنا رکھے ہیں جنکی باقائدہ پوجا تک ہوتی ہے
جنوبی ہند میں رجنی کانت مندر ہے جہاں انکے پرستار انکی پوجا کرتے ہیں پاکستان کے ایک گلوکار کے گلے میں بھی پڑوسیوں نے بھگوان ڈھونڈا تھا لیکن ہماری قوم ابھی اتنی " بت پرست " بھی نہیں ہوئی .

یہ بیماری صرف مشرق میں ہی نہیں بلکہ مغرب میں بھی موجود ہے مائیکل جیکسن ، مڈونا اور لیڈی گا گا کے باقائدہ پرستار موجود ہیں
ایسے ہی ایک گروپ کے خیالات کچھ یوں ہیں (We believe that Michael Jackson is an Angel trapped inside a human flesh. A Precious Treasure that God (or any high power you choose to believe in) gave us.)
(The International Group of The Anointed Michael Followers )

معروف گلوکارہ مڈونا خود کو شیطان کی پجارن سمجھتی ہیں اور انکی سٹیج پرفارمنسس میں شیطان کی پوجا بھی ہوتی ہے کہا جاتا ہے کہ انکا تعلق خفیہ گروپ الو منا ٹی سے ہے حوالہ ملاحظہ کیا جا سکتا ہے
(http://occultpopagenda.blogspot.com/2012/02/superb-owl-worship-high-priestess.html)

ایسے ہی کچھ مظاہرے ہم نے اس شو کے دوران بھی دیکھے ہیں جب انسانی بت کی توصیف کیلئے ججز کھڑے ہوکر اپنے دونوں ہاتھوں کو ملا کر گھٹنوں کے بل جھکتے اور اس تازہ خدا کو پرنام کرتے دکھائی دیتے ہیں .

ان تمام باتوں سے قطع نظر کیا کسی بھی قوم کی سب سے زیادہ آئڈیل شخصیت یا (idol) کوئی گلوکار ہی ہو سکتا ہے کیا ٹیلنٹ صرف یہ ہی ہے کوئی ڈاکٹر ، انجینیر ، سائنسدان ، سوشل ورکر یا کوئی مذہبی اسکالر ہمارا آئڈیل کیوں نہیں ہو سکتا ہمارا پیسہ ہمراہ پروپگنڈہ اس مصرف میں کیوں استعمال نہیں ہوتا کیا ایک اسلامی معاشرے کا مزاج یہ ہی ہونا چاہئیے
اور کیا ہم صرف نقالی ہی کر سکتے ہیں ہماری کوئی سوچ نہیں ہم میں کوئی تخلیقی صلاحیت موجود نہیں اور کیا صرف مغرب کے رنگ میں رنگ جانا ہی ترقی کی علامت ہے

جدید میڈیا کے نا خدا ہمیں ایسے راستے پر ڈال رہے ہیں جس سے واپسی شاید ہمارے لیے ممکن نہ ہو سکے

میں تجھ کو بتاتا ہوں ، تقدیر امم کیا ہے
شمشیر و سناں اول ، طاؤس و رباب آخر
میخانہ یورپ کے دستور نرالے ہیں
لاتے ہیں سرور اول ، دیتے ہیں شراب آخر
کیا دبدبہ نادر ، کیا شوکت تیموری
ہو جاتے ہیں سب دفتر غرق مے ناب آخر
خلوت کی گھڑی گزری ، جلوت کی گھڑی آئی
چھٹنے کو ہے بجلی سے آغوش سحاب آخر
تھا ضبط بہت مشکل اس سیل معانی کا
کہہ ڈالے قلندر نے اسرار کتاب آخر

حسیب احمد حسیب

بحث میں شامل ہونے کے لیے یہاں کلک کریں۔ کومنٹس پڑھیں پرنٹ کریں

25 کومنٹس

Haseeb Khan

Arshad Mehmood

Abdul Rasheed

Saira Fida Hussain

Mughal Elahi

Talib Hussain

Saira Fida Hussain


Raja Sumra

Asad Raza

Haseeb Khan

Basit Azar

Basit Azar

Basit Azar

Haseeb Khan

Basit Azar

Basit Azar

Haseeb Khan

Haseeb Khan

Basit Azar

Basit Azar

Basit Azar

Haseeb Khan

Basit Azar

Haseeb Khan


بحث میں شامل ہونے کے لیے یہاں کلک کریں۔