Action
Syed Fawad Bokhari
Syed Fawad Bokhari کومنٹس

محترمہ ناہید اختر صاحبہ Naheed Akhter کی ایک پوسٹ کا کنکلوژن (لنک نیچے دیکھیئے) ۔

پوسٹ ، گروہ بندی، انسانی فطرت اور معاشرتی فکری ڈاھنچے کی مد میں تھی ۔

اس پوسٹ پہ جناب سیلمان واثق صاحب Sulemaan Wathiq، جناب امجد علی شاہ Amjed Ali Shah صاحب، سید فواد بخاری Syed Fawad Bokhari، جناب ساجد حسین Sajid Hussain صاحب،جناب شیخ رضا صاحب Sheikh Raza، جناب سمیع بخاری صاحب Sami Bukhari، جناب افراسیاب کامل صاحب Afrasiab Kamil، محترمہ ناہید اختر صاحبہ اور جناب ارشد محمود صاحب Arshad Mehmood نے اپنا حصہ ڈالا۔

پوسٹ کا کنکلوژن
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
۱. انسانی نفسیات پہ اثر انداز ھوتی ماحولیاتی فطرت انسان کی فطرت ثانیہ اور کردار بننے میں اہم کرداد ادا کرتی ھے۔ مختلف انوائیرمینٹل، جیوگرافیکل، اور حالات و واقعات ایک خاص مدت کے بعد اس علاقے کے تمدن، سماج اور معاشرے کی تشکیل کا سبب بنتے ہیں۔ لہذا معاشرہ، معاش، مذہب، سماج سب ایک طرح سے بنیادی فطری حالات پہ انخصار کرتے ہیں۔ جہاں جہاں حالات میں تنوع آتا ھے، وہیں مختلف سماج بنتے ہیں، معاشرے اور گروہ بنتے ہیں۔
۲۔ انسان بھی چونکہ انحصار کے نظام کا حصہ ہے چنانچہ اپنے ابنائے نوع کے ساتھ گروہ بندی کے ماحول میں رہتا ہے۔ کئ دفعہ یہ گروہ بندی اس کے محودود تصورات کے نتیجے میں پیدا ہونے والے خوف یا عدم تحفظ کا نتیجہ ہوتی۔ ایسے میں شر بھی انسانی شعور کا کارنامہ ھے۔ اور ایسے میں یاد داشت ایک فتنہ بن کے ابھرتی ھے۔

۳۔ اور ایسے میں، بنیاد بقا کی جنگ بن جاتی ھے۔ اپنے دفاع کیلیے معاشرے کی اکایئوں نے ایک دوسرے کو ساتھ ملایا، اور گروہ بننا شروع ہو گئے۔ اس کے بعد طاقت میں اضافہ شروع ہوا وہ بھی سر وائول کے لیے تہزیبوں کے گروہ بننا شروع ھو گئے۔ اسی طرح بے اعتمادی اور خود نمائی کی ایک ، اکائی کی سطح پہ پنپنے والی، خواہش نے بھی تہذیبی ،سیاسی ، سماجی اور خصوصا مذہبی گروہ بندیوں کی بنیاد رکھی۔ ضروریات زندگی کی اہمیت پھر باقی جزبوں کو ہوا دیتی ہے۔ زندگی اور فطری جزبوں کی آمیزش کا ہی ایک نتیجہ معاشرہ ھے۔ اور جب انسان دیکھ لیتا ہے کہ اب اس کی سروائویل کو مسلئہ نہی ہے پھر وہ بقائے دوام چاہتا ہے اور بقائے امن باہمی چاہنا شروع ھو جاتا ھے۔

۴۔ انسان ایک معاشرتی حیوان ہے،بلکہ صرف انسان ہی معاشرتی حیوان ہے۔ ہمارا شعور ہم سے ابلاغ کا تقاضا کرتا ہے۔ شایئد، سب سےپہلے گروہ بنانے کی ضرورت انسانوں کو اپنے تحفظ کا احساس ہونے کی وجہ سے محسوس ہوئی ۔

۵۔ لہذا، انسانی شعور کی حدود و قیود سے قطع نظر، تنوع انسانی شعور کی بنیادی ترین ضرورتوں میں سے ایک ہے ۔ شاید گروہ کی ایک تعریف تقسیم کی مد بهی ہو،لیکن بقائے باہمی کیلئے بهی تو، انسان کو اس کی ضرورت ہے.

اس پوسٹ کے نکات کا خلاصہ نیچے کومینٹس میں دیکھیئے۔
..........................

جس پوسٹ کا کنکلوژن پیش کیا گیا ھے، وہ اس لنک پہ دیکھیئے

https://www.facebook.com/groups/muslimsceptics/permalink/486411481473610/?stream_ref=2

بحث میں شامل ہونے کے لیے یہاں کلک کریں۔ کومنٹس پڑھیں پرنٹ کریں

1 کومنٹس



بحث میں شامل ہونے کے لیے یہاں کلک کریں۔