Action
Syed Fawad Bokhari
Syed Fawad Bokhari کومنٹس

محترمہ عائشہ مرزا Aayesha Mirzaa کی ایک پوسٹ، لنک نیچے دیکھیئے، کا ایک کنکلوژن

پوسٹ قرآن کی اضافی نوعیت کی تشریحات کی وجوہات پہ مبنی تھی۔

اس پوسٹ پہ جناب محمد شعیب صاحب Muhammad Shoaib ، جناب عبدالسلام خلیفہ صاحب AbdusSalam Khalifa ، اور سید فواد بخاری نے اپنا حصہ ڈالا۔

پوسٹ کا کنکلوژن
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

۱۔ روایت کو اپنی کتاب میں درج کرنے والا مؤلف روایت کی مزید تحقیق اپنے بعد آنے والوں پر چھوڑ دیتا ہے، گویا کہ روایات بعد میں بھی قابل تحقیق رہتی ہیں۔

۲۔ دین کی رائج اصطلاح میں، کچھ ضروریات کے طور پہ تعریف کردہ ہیں کہ جن میں اختلاف کی گنجایئش نہیں، اور کچھ فروعات کے طور ہی تعریف کردہ ہیں کہ جو قابل تحقیق ہیں۔ اور کچھ عرف ہیں کہ جو معشاری معروف اخلاقی اقدار ہیں۔

۳۔ انسان کی معاشرتی، معاشی اور بنادی ضروریات کا حصول کی ڈائینیمیکس اس بات کا تعین کرتی ھے کہ انسان مختلف معاشرے کو کیسا دیکھتا ھے۔ لہذا جس دور میں جس سماج اور سماج کی اکائی کو جو کامیابی ھو یا ناکامی ھو گی اُس کا بلترتیب جزبہ خیر سگالی و چڑچڑاہٹ اسی تناسب سے تشکیل پائے گا، اور اسے جزبے کی ڈائینیمیکس آگے چل کے ایک شدت پسندانہ اور ترقی پسندانہ تشریخ کا باعث بنتا ھے۔

۴۔ بقا کا اصول معاشرتی قدروں کی ڈیفینیشن کا باعث ھے اور ارتقا پذیر ہیں۔ یہ، ایک خاص وقت میں اپنی نمود و پروان اور صورتحال کے مطابق اُس وقت کے اخلاق کی اینٹرپریٹیشن کرتی ہیں۔ اور نتیجتا امن بقائے باہمئ کا ہی نتیجہ ھے۔

۵۔ شایئد سروائول کی دنیا میں سب سے بڑی نیکی ذندہ رہنا اور سب سے بڑی برائی ایسا طرز زندگی اپنانا ھے کہ جو، اپنے یا دوسروں کے، مرنے کا بندوبست کرے، لہذا ایسے میں اخلاق اور مزہب کی کی اینٹرپریٹیشن بہت اضافی ھو جاتی ھے۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

اس پوسٹ کے نکات کا خلاصہ نیچے کومینٹس میں دیکھیئے۔
..........................

جس پوسٹ کا کنکلوژن پیش کیا گیا ھے، وہ اس لنک پہ دیکھیئے۔

https://www.facebook.com/groups/muslimsceptics/permalink/486191904828901/

بحث میں شامل ہونے کے لیے یہاں کلک کریں۔ کومنٹس پڑھیں پرنٹ کریں

2 کومنٹس

Syed Fawad Bokhari

Arshad Mehmood


بحث میں شامل ہونے کے لیے یہاں کلک کریں۔