Action
Syed Fawad Bokhari
Syed Fawad Bokhari کومنٹس

سید فواد بخاری کی ایک پوسٹ (لنک نیچے دیکھیئے) کہ جو جناب ارشد محمود صاحب Arshad Mehmood کے اُس سوال کی مد میں پیش کی گئی کہ جو انہوں نے محترمہ فرحانہ صاحبہ Farhana Sadiq کی ایک سٹیٹس اپڈیٹ کی مد میں اٹھایا تھا۔

پوسٹ ، ڈرون حملوں اور نیٹو سپلائی کے سلسلے میں ھمارے کردار کے بارے میں تھی۔

اس پوسٹ پہ سید فواد بخاری Syed Fawad Bokhari ، جناب ساجد حسین صاحب Sajid Hussain ، شیخ رضا صاحب Sheikh Raza , جناب میم قاف ادیب ، جناب افراسیاب کامل صاحب Afrasiab Kamil، جناب ابرار جان Abrar Jan، جناب احمد خلیل جازم صاحب Ahmed Khalil Jazim، جناب امجد علی شاہ صاحب Amjed Ali Shah، جناب سمیع بخاری Sami Bukhari،محترمہ ناہید اختر صاحبہ Naheed Akhter، جناب حمید نیازی صاحب Hameed Niazi ، جناب شہریار قریشی صاحب Shaharyar Qureshi ، جناب جمشید گل صاحب Jamshed Gill،جناب ارشد محمود صاحب اور جناب نعمان علی خان صاحب Noman Ali Khan نے اپنا حصہ ڈالا۔

پوسٹ کا کنکلوژن
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
۱۔ پوسٹ میں مختلف مستند اداروں، جریدوں اور رسالوں سے لیئے گئے مختلف آرٹیکلز، ریپورٹس کے لنک دیئے کہ جو شایئد ڈرون حملوں اور انکے اثرات کو جاننے میں مدد دیں۔

۲۔ ڈرون حملوں میں اخلاق، سماجی اصول، ریاستی خودمختاری، اور دیگر، سب سے متعلق کئی اضافی نوعیت کے ریاستی اور سماجی اقدار سامنے آتے ہیں، یعنی اخلاقی اضافت بہت استقلال (کنسیسٹینسی) سے نظر آتی ھے۔ ریاست سے ہٹ کے اگر ایک ایک انسان کی بین الاقوامی ساسی افق پہ ابھرنے والے منظر نامے کی صورت میں دیکھا جائے ، تب بھی کم از کم دو اضافی نوعیت کی اقدار (کنزرویٹیوز اور نان کنزرویٹیو) آمنے سامنے ہیں۔

۳۔ لہذا جہاں ایک گروہ کیلیے ایک اپنے کلٹ، گروہ، فرقہ، جماعت، ملک، معاشرے وغیرہ کیلیے خدمت ھے، تو دوسرے کیلیے وہی دہشت، انتہا پسندی وغیرہ ھے۔

۴۔ ڈرون سے متعلق قومی لیول پہ کئی مختلف آرا موجود ہیں کہ جن میں مندرجہ ذیل عنوان عموما ھوتے ہیں۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
۴۔۱۔ پاکستان کی خودمختاری اور مزاحمت کی ضرورت
۴۔۲۔ ڈرون حملوں کی افادیت
۴۔۳۔ دہشت گردوں کے خلاف جارحیت کا حق اور معاشی استحکام
۴۔۴۔ معاشی تنگی کا فیصلہ اور خود کفالت
۴۔۵۔ معاشی تنگی، خود کفالت اور دانشمندی
۴۔۶۔ پاکستان کے نظام عدالت کا نفاز اور دانشمندانہ سفارتکاری
۴۔۷۔ تعلیم و تربیت : دہشت گردی کے خاتمہ کا ایک حل
۴۔۸۔ قوموں کی زندگی میں عبرت ایک اہم مقام ارفع
۴۔۹۔ جو جیتے وہی سکندر
۴۔۱۰۔ کمتر کی ناپیدی اور ہم آہنگ قوم کی بقا
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

۵۔ کامیاب جنگی نتائج قوموں کی ان تیاری پہ منخصر ھوتی ہیں کہ جو امن کے دنوں میں کی جاتی ہیں۔ اور ان تیاریوں میں، معاشی تیاری، علمی تیاری، ٹیکنالوجی کی تیاری، ،معاشرے میں عدالت کی تیاری بہت اہم ھے۔ کہ جو اگر نامکمل ھو، جنگ لڑی تو شایئد جا سکتی ھے، جیتی شایئد نہ جا سکے۔

۶۔ بڑے فیصلے کرنے والے لیڈران چاہیئے اور چھوٹے پریشر گروپس کی خوصلہ شکنی کرنی ہے۔ اور ایسے میں جو کوئی جایئز ضرورت کو ناجائز طریقے سے حاصل کرتا ھے وہ اِسی معاشرے میں اِسے جائز طریقہ سے بھی میسر ہونا چاہیئے تاکہ ری ایکشن کو ختم کیا جائے۔ جو کوئی بهی اجتماعی انسانی شعور سے جنم لینے والے اصولوں کو پامال کرتا ہے وہ پهر ملزم نہیں خود مجرموں میں ہے.

۷۔ جب مختلف عالمی ایجینڈا ھوں، تو باقیوں کے کیلیے، شایئد یہ، لازم نہیں ھے کہ وہ کسی ایک کو لازم مانے۔ دنیا کا درد، سوپر پاورز، ایک پولیٹیکل کنسٹرکٹ کے طور پہ، اپنے مقاصد کیلیے، استعمال کرتی ہیں۔ مگر دنیا ایک بہت بڑی بھینس ہے ، ایک لاٹھی سے زیادہ دیر ہانکی نہیں جا سکے گی۔

۸۔ ہر قوم کے لئے خود مختاری اتنی ہی ناگزیر ہے کہ جتنا ایک انسان کے جینے کے لئے سانس لینا۔ امریکہ کو یوں بھی اس خطے سے چلے جانا ہے۔ ہمیں سوچنا ہے کہ ہمارا مستقبل کیا ہو گا۔ یا بالفاظ دیگر ، ہم کیسا مستقبل چاہتے ہیں۔

۹۔ بیرونی امداد کبھی بھی ملکوں اور قوموں کی زندگی کی ضمانت نہیں ھوسکتی۔ فرد ، قوم یا ملک اپنی بقاء کی ذمہ دار ہمیشہ آپ ہوتا ہے ، کوئی دوسرا اس کی دائمی بقا کا ضامن نہیں ہو سکتا۔

۱۰۔ کوریکٹیو Corrective حل فائدے کے ساتھ نقصان بھی دیتا ھے، اور ایسے میں پریوینٹیو Preventive حل زودمند بھی ھے، دیر پا بھی ھے اور سلامتی کا باعث ھے۔ ہمارے حکمران اور ہماری اشرافیہ کو ملکی وسائل اور میڈیا جیسی طاقتور ترین چیز کو قوم کی یکسوئی کیلیے استعمال کرنا چاہیئے۔

۱۱۔ میڈیا کو بھی اپنے اپنے مفادات کی جنگ سے باھر نکلنا ہو گا اور اس قوم کو مسائل کے ساتھ ساتھ ان کے حل کے لیئے ملک کے بہتین صلاحیت اور دماغ رکھنے والے لوگوں کو سامنے لائے تاکہ وہ قوم کے بیڑے کو پار لگائیں۔

اس پوسٹ کے نکات کا خلاصہ نیچے کومینٹس میں دیکھیئے۔
..........................

جس پوسٹ کا کنکلوژن پیش کیا گیا ھے، وہ اس لنک پہ دیکھیئے

https://www.facebook.com/groups/muslimsceptics/permalink/485596574888434/

بحث میں شامل ہونے کے لیے یہاں کلک کریں۔ کومنٹس پڑھیں پرنٹ کریں

10 کومنٹس

Syed Fawad Bokhari

Syed Fawad Bokhari

Syed Fawad Bokhari

Syed Fawad Bokhari

Hameed Niazi

Sami Bukhari

Arshad Mehmood

Syed Fawad Bokhari

Syed Fawad Bokhari

Syed Fawad Bokhari


بحث میں شامل ہونے کے لیے یہاں کلک کریں۔