Action
Syed Ziauddin Naeem
Syed Ziauddin Naeem کومنٹس

دوستوں کی خدمت میں ۔۔۔۔۔ رہنمایٔ کی درخواست کے ساتھ ۔۔۔

1920'' سے پہلے جو Newtonian Mecanics تھی اُس کے مطابق مادہ (Matter ) کی آخری اکایٔ ( یونِٹ) ایٹم تھا ۔۔ اُس وقت ایٹم (atom ) ناقابل تقسیم سمجھا جاتا تھا ، اُس وقت یہ سمجھا جاتا تھا کہ ہر چیز قابل مشاہدہ ہے ۔ اِس لیٔے معقول استدلال(valid argument ) وہی ہے جو براہ راست استدلال(direct argument ) کے اصول پر مبنی ہو ۔۔

مگر 1920 کے بعد نیوکلیٔر سایٔنس(nuclear science ) میں جو نیٔ تحقیقات ہو یٔیں اُس کے نتیجے میں '' ایٹم '' ٹوٹ گیا ۔۔ اب کلاسیکل فزکس(classical physics ) کی جگہ ''ویو میکانکس (wave mechanics ) وجود میں آیٔ ۔ اِس تبدیلی کا اثر اصول استدلال پر پڑا ۔۔ اِس نیٔ دریافت نے استنباطی استدلال(inferential argument ) کی اہمیت بڑھادی ۔ اب یہ مان لیا گیا کہ استنباطی استدلال بھی اُتنا ہی معقول استدلال(valid argument ) ہے ، جتنا کہ براہ راست استدلال(direct argument ) ۔۔۔

بِنا ۓ استدلال(base of argument ) کی اِس تبدیلی کے بعد خدا کے عقید ے پر استدلال قایٔم کرنا اُتنا ہی ممکن ہو گیا ہے جتنا کہ '' الیکٹران ''پر استدلال قایٔم کرنا ۔۔ جیسا کہ معلوم ہے الیکٹران کے وجود کو inferential argument کے ذریعے ثابت کیا جاتا ہے ۔۔ یہی ''انفرینشل آرگیو منٹ '' اب خدا کے وجود کو علمی طور پر ثابت کرنے کے لیٔے حاصل ہوگیا ۔۔ چنانچہ '' بر ٹرینڈ رسل '' نے ''ڈیزایٔین '' سے استدلال کو (argument from design ) کو اپنی نوعیت کے اعتبار سے '' سایٔنسی استدلال قرار دیا ہے ۔۔
موجودہ طبیعاتی علماء ( Physicists ) اِس بات کا اعتراف کر رہے ہیں کہ کایٔنات کی حد درجہ '' معنویت '' meaningfulness ) اِس بات کی گواہی دے رہی ہے کہ موجودہ ''کایٔنات '' کسی ذہن (mind ) کی تخلیق ہے ۔۔۔۔۔ ''

بحث میں شامل ہونے کے لیے یہاں کلک کریں۔ کومنٹس پڑھیں پرنٹ کریں

13 کومنٹس

Syed Ziauddin Naeem

Ahmed Khalil Jazim

Syed Fawad Bokhari

Noman Ali Khan

Afrasiab Kamil

Syed Ziauddin Naeem

Syed Ziauddin Naeem

Syed Ziauddin Naeem

Syed Ziauddin Naeem

Syed Ziauddin Naeem

Syed Fawad Bokhari

Arshad Mehmood

Syed Fawad Bokhari


بحث میں شامل ہونے کے لیے یہاں کلک کریں۔